Type Here to Get Search Results !

Aankhen Bhigo Ke Dil Ko Rula Kar Chale Gaye Lyrics

Views 0

Also Read

 Aankhen Bhigo Ke Dil Ko Rula Kar Chale Gaye Lyrics

Listen to the the audio file

آنکھیں بھگو کے دل کو ہلا کر چلے گئے
ایسے گئے کے سب کو رُلا کر چلے گئے

افتاء کی شان علم وہنر کا وقار تھے
سادہ مجاز زندہ دِلی کی بہار تھے
محفل ہر ایک سونی بنا کر چلے گئے
ایسے گئے کے سب کو رلا کر چلے گئے

عمرِ تمام دین کی خدمت میں کاٹ دی
اپنے کرم سے کفر کی تاریک چھانٹ دی
حکمِ شریعت ہم کو بتا کر چلے گئے
ایسے گئے کے سب کو رلا کر چلے گئے

دینِ نبی کی خدمتیں مقبول ہو گئی
سینوں میں ان کی الفتیں محفوظ ہو گئی
دیوانہ اپنا سب کو بنا کر چلے گئے
ایسے گئے کے سب کو رلا کر چلے گئے

اعلانِ سحری جس نے بہیڑی کو دے دیا
اور پھر جلوسِ بارہویں بھی عطاء کیا
تحریک کیسی کیسی چلا کر چلے گئے
ایسے گئے کے سب کو رلا کر چلے گئے

سلطان اشرف اسم بھی شایانِ شان تھا
ہر اک لحاظ سے جو بہیڑی کی جان تھا
کیسا پہاڑ غم کا گِرا کر چلے گئے
ایسے گئے کے سب کو رلا کر چلے گئے
✰✰✰

Post a Comment

0 Comments

Top Post Ad

Below Post Ad