Type Here to Get Search Results !

humse badal gaya woh nigahein to kya hua lyrics

Views 0

Also Read

Unlimited Shayari Thumbnail

ہم سے بدل گیا وہ نگاہیں تو کیا ہوا

زندہ ہیں کتنے لوگ محبت کئے بغیر


گزرے دنوں میں جو کبھی گونجے تھے قہقہے

اب اپنے اختیار میں وہ بھی نہیں رہے

قسمت میں رہ گئی ہیں جو آہیں تو کیا ہوا

صدمہ یہ جھیلنا ہے شکایت کئے بغیر


وہ سامنے بھی ہوں تو نہ کھولیں گے ہم زباں

لکھی ہے اس کے چہرے پہ اپنی ہی داستاں

اس کو ترس گئی ہیں یہ باہیں تو کیا ہوا

وہ لوٹ جائے ہم پہ عنایت کئے بغیر


پہلے قریب تھا کوئی اب دوریاں بھی ہیں

انسان کے نصیب میں مجبوریاں بھی ہیں

اپنی بدل چکا ہے وہ راہیں تو کیا ہوا

ہم چپ رہیں گے اس کو ملامت کئے بغیر



ہم سے بدل گیا وہ نگاہیں تو کیا ہوا

زندہ ہیں کتنے لوگ محبت کئے بغیر


قتیؔل شفائی 

Post a Comment

0 Comments

Top Post Ad

AD Banner

Below Post Ad

AD Banner