Type Here to Get Search Results !

Main jhoot agar bolu lyrics

Views 0

Also Read

 میں جھوٹ اگر بولوں سولی پہ چڑھا دینا

فطرت ہے حسینوں کی دل لیکے دغا دینا


پروانہ کو شمع سے امیدِ وفا کیا ہو

ہے کام فقط ان کا جل جل کے جلا دینا


گر میری محبت میں ایک ذرہ کمی پاؤ

حق دیتا ہوں میں تم کو جو چاہو سزا دینا


احباب جنازہ میرا جب لیکر نکلیں گے

تم آکے جنازہ پہ دو پھول چڑھا دینا


جس خط سے ہو رسوائی انجامِ محبت میں

مت رکھنا کتابوں میں اس خط کو جلا دینا


جل جل کے اکیلے میں خود کو نہ جلا  دینا

گر میری ضرورت ہو کھڑکی سے بلا لینا


جب چاندنی راتوں میں تم چھت پہ ملو ہم سے

پیشانی سے زلفوں کو اس وقت ہٹا دینا


ایک بار چلے آؤ تنہائی کے موسم میں

تم میری وفاؤں کا کچھ بھی تو صلہ دینا


میں جھوٹ اگر بولوں سولی پہ چڑھا دینا

فطرت ہے حسینوں کی دل لیکے دغا دینا

Download

Post a Comment

0 Comments

Top Post Ad

Below Post Ad