Type Here to Get Search Results !

Hai Labe Isa Se Naat Tazmeen Lyrics

Views 0

یہ بھی پڑھیں

 Hai Labe Isa Se Naat Tazmeen Lyrics

لے کے زنبیلِ شفا لوٹیں سوالی ہاتھ میں
تشنے ہوں سیراب جس سے ہے وہ بیالیس ہاتھ میں
بن گئی ہے سیفِ حق آتے ہی ڈالی ہاتھ میں

ہے لبِ عیسیٰ سے جاں بخشی نرالی ہاتھ میں
سنگ ریزے پاتے ہیں شیریں مقالی ہاتھ میں

ان کو خالق نے کیا ہے رحمۃ اللعالمیں
ان کے آگے خم ہے دنیائے عقیدت کی جبیں
شان رکھتے ہیں نرالی سرورِ دنیا و دیں

مالکِ کونین ہیں گو پاس کچھ رکھتے نہیں
دو جہاں کی نعمتیں ہیں ان کے خالی ہاتھ میں

کر طبیعت شاد پہلے لفظ مدحت چوم کر
پھر نبی کی شان و عظمت اے قلم منظوم کر
صفحۂ دل پر دعا کے لفظ یوں مرقوم کر

سایہ افگن سر پہ ہو پرچم الٰہی! جھوم کر
جب لِوَاءُ الْحَمْد لے امّت کا والی ہاتھ میں


بارگاہ مصطفے ہے مرکزِ امید و بیم
ان کے صدقے دے رہا ہے سب کو مولائے کریم
رب نے اپنی نعمتوں کا کر دیا ان کو قسیم

ہر خطِ کف ہے یہاں اے دستِ بیضائے کلیم
موج زن دریائے نورِ بے مثالی ہاتھ میں


سبز گنبد کے قریں وہ ابرِ رحمت کا ورود
دیکھ کر جس کو سکوں پاتا ہے انسانی وجود
آہ وہ رحمت کا دھارا آہ وہ جام شہود

آہ وہ عالم کہ آنکھیں بند اور لب پر درود
وقف سنگِ در جبیں روضے کی جالی ہاتھ میں


عدل کا میزان گوہر جب لگے روزِ جزا
جب بصد شان شفاعت آئیں گے محبوبِ خدا
فیصلہ عاصی کے حق میں دیکھتے ہیں خلد کا

حشر میں کیا کیا مزے وارفتگی کے لوں رضاؔ
لوٹ جاؤں پا کے وہ دامانِ عالی ہاتھ میں


تضمین نگار:- شاعرِ اسلام مولانا محبوب گوہر اسلام پوری صاحب
✰✰✰

Post a Comment

0 Comments

Top Post Ad

Below Post Ad