Type Here to Get Search Results !

Sar Taba Qadam Tazmeen Lyrics

Views 0

یہ بھی پڑھیں

 Rabbe Sallim Ki Sadayen Gungunate Jayenge Naat Lyrics

لب ہائے رسالت کا ہے ہر لفظ سخن پھول
ایسا تیری شاخوں میں نہیں ہوگا چمن پھول
مہکا گیا سرکار کے تلوؤں کا دھووَن پھول

سر تا بقدم ہے تنِ سلطانِ زمن پھول
لب پھول، دہن پھول، ذقن پھول، بدن پھول


اک چاک گریبان بھی ہم سے نہیں سلتا
بن تیری عنایات کے دم خم نہیں ملتا
گلشن تو بڑی بات ہے اک گل نہیں کھلتا

تنکا بھی ہمارے تو ہلائے نہیں ہلتا
تم چاہو تو ہو جائے ابھی کوہِ محن پھول


اے سرورِ کونین شہنشاہِ مدینہ
ہے پاک غسالہ ترا عطروں کا خزینہ
مہکے گا گلابوں کی طرح اپنا بھی سینہ

وَاللہ! جو مِل جائے مِرے گل کا پسینہ
مانگے نہ کبھی عِطر نہ پھر چاہے دلھن پھول


کیا خالقِ کونین نے صورت ہے بنائی
ہر عضو سے انوار کی ہے جلوہ نمائی
پھلائے ہے مہتاب بھی دامان گدائی

دندان و لب و زلف و رُخِ شہ کے فدائی
ہیں درِّ عدن، لعلِ یمن، مشکِ ختن پھول


اعجاز سراپا ہے بدن شاہِ ہدیٰ کا
صدقہ جہاں پایا ہے ستاروں نے ضیاء کا
کیا وصف کوئی لکھے گا محبوب خدا کا

دل اپنا بھی شیدائی ہے اس ناخنِ پا کا
اتنا بھی مہِ نو پہ نہ اے چرخِ کہن پھول


ہے شاخ ہری گل کدۂ شاہ اُمم کی
گوہرؔ ہے بڑھی جس کے سبب شان حرم کی
زینت انہیں پھولوں سے ہے گلزارِ حرم کی

کیا بات رضاؔ اُس چمنستانِ کرم کی
زَہرا ہے کلی جس میں حُسین اور حَسن پھول


تضمین نگار:- شاعرِ اسلام مولانا محبوب گوہر اسلام پوری صاحب
✰✰✰

Post a Comment

0 Comments

Top Post Ad

Below Post Ad