Type Here to Get Search Results !

Kya tarana Hai Ghausul wara ka Lyrics | Azmat Raza Bhagalpuri

Views 0

Also Read

Listen to the audio file
کیا ترانہ ہے غوث الورٰی کا کیا گھرانہ ہے غوث الورٰی کا
جن کے تلوؤں کو چومے فرشتے ہاں وہ نانا ہے، غوث الورٰی کا

جا کے دربار میں اے دیوانوں حالِ دل اپنا ان کو سناؤ
کیونکہ دربار خیر الورٰی میں آنا جانا ہے غوث الورٰی کا

اس لئے در پہ میلہ لگا ہے اسلیے بھیڑ ہر دم لگی ہے
بے بسوں بے کسوں کا سہارا، آستانہ غوث الورٰی کا

جان ودل ان پہ قربان کردو، عشق میں ان کے خود کو مٹا دو
تاکہ محشر میں بولیں فرشتے یہ دیوانہ ہے غوث الورٰی کا

مصطفٰی جانِ رحمت کے صدقے بادشاہت ملی ان کو ایسی
 کھا رہے ہیں جو ہم آج عظمتؔ دانہ دانہ ہے غوث الورٰی کا

عظمتؔ رضا بھاگلپوری 

Post a Comment

0 Comments

Top Post Ad

Below Post Ad