Type Here to Get Search Results !

Zahe izzat o tazmeen lyrics

Views 0

یہ بھی پڑھیں

 Zahe izzat o tazmeen lyrics

خدا کو ہے پیاری ادائے محمد
لکھے کیسے کوئی ثنائے محمد
یہ دنیا ہے ساری برائے محمد

زہے عزّت و اعتلائے محمد
کہ ہے عرشِ حق زیرِ پائے محمد ﷺ


جناب ابن مریم سے تا نوح و آدم
سبھی انس و جاں قدسیانِ مکرم
ہیں جو کچھ بھی از فرش تا عرشِ اعظم

خدا کی رضا چاہتے ہیں دو عالم
خدا چاہتا ہے رضائے محمد ﷺ


سدا فضل باری ہو میری زباں پر
ثنا ان کی پیاری ہو میری زباں پر
نہ کچھ اور طاری ہو میری زباں پر

دمِ نزع جاری ہو میری زباں پر
محمد محمد خدائے محمد ﷺ


عصا بن گیا سانپ اس میں سبب تھا
ہو فرعون ناکام فرمان رب تھا
یہ اعجاز موسیٰ کا کتنا عجب تھا

عصائے کلیم اژدہائے غضب تھا
گِروں کا سہارا عصائے محمد ﷺ


دعا کا کوئی حرف جب لب پہ آیا
تو سر اپنا بابِ اثر نے جھکایا
قبلت کا مولیٰ نے مژدہ سنایا

اجابت نے جھک کر گلے سے لگایا
بڑھی ناز سے جب دعائے محمد ﷺ


نہ غم کیجئے اور نہ ڈرتے گزرئے
اے گوہر قدم پل پہ دھرتے گزرئے
کرم کی فضا ہے سنورتے گزرئے

رَضا پل سے اب وجد کرتے گزریے
کہ ہے رَبِّ سَلِّمْ صَدائے محمد ﷺ


تضمین نگار:- شاعرِ اسلام مولانا محبوب گوہر اسلام پوری صاحب
✰✰✰

Post a Comment

0 Comments

Top Post Ad

Below Post Ad