Type Here to Get Search Results !

milkar juda hue to na soya karenge hum lyrics

Views 0

Also Read

Unlimited Shayari Thumbnail
مل کر جدا ہوئے تو نہ سویا کریں گے ہم
اک دوسرے کی یاد میں رویا کریں گے ہم

آنسو جھلک جھلک کے ستائیں گے رات بھر
موتی پلک پلک میں پرویا کریں گے ہم

جب دوریوں کی آگ دلوں کو جلائے گی
جسموں کو چاندنی میں بھگویا کریں گے ہم

بن کر ہر ایک بزم کا موضوع گفتگو
شعروں میں تیرے غم کو سمویا کریں گے ہم

مجبوریوں کے زہر سے کر لیں گے خودکشی
یہ بزدلی کا جرم بھی گویا کریں گے ہم

دل جل رہا ہے زرد شجر دیکھ دیکھ کر
اب چاہتوں کے بیج نہ بویا کریں گے ہم

گر دے گیا دغا ہمیں طوفان بھی قتیلؔ
ساحل پہ کشتیوں کو ڈبویا کریں گے ہم

قتیل شفائی

Post a Comment

0 Comments

Top Post Ad

AD Banner

Below Post Ad

AD Banner